انٹر امتحانات میں نقل کا رجحان زور پکڑ گیا

حیدرآباد: 21 مئی: تعلیمی بورڈ حیدرآباد کے زیر اہتمام گیارہویں اور بارہویں جماعت کے امتحانات میں موبائل فون سے نقل کا رجحان زور پکڑ گیا ہے۔ انتظامیہ اس عمل کو فوری روکنے میں ناکام ہو گئی ہے۔ ثانوی ور اعلی ثانوی تعلیمی بورڈ کے تحت منعقدہ امتحانات میں حل شدہ پرچوں، نوٹس اور گائیڈوں سے نقل کرنے کا رواج تو اپنی جگہ برقرار ہے لیکن حالیہ فرسٹ اور سیکنڈ ایئر کے امتحانات میں نقل کے لئے موبائل فونز کا استعمال بھی بڑھ گیا ہے۔ طلبا تمام تر سختیوں کے باوجود فون انتظامیہ کی آنکھ سے بچا کر امتحانی مراکز میں لے جاتے ہیں اور پچے کے دوران موبائل کمپنیز کی جانب سے متعارف کردہ طویل دورانیہ کی کالج کے سستے ترین پیکجز سے بھرپور فائدہ اٹھاتے ہیں۔ جمعہ کو فرسٹ ایئر کے باٹنی کے پرچے میں شہر کے مختلف کالجوں میں طلبا موبائل فون کے ذریعے کھلم کھلا نقل کرتے رہے۔ دوسری طرف امتحانی مراکز پر ویجلینس ٹیموں کے چھاپے بھی جاری ہیں۔ حیدر آباد بورڈ کے علاوہ اندرون سندھ کے 9 اضلاع کے کالجوں میں بھی صورت حال مختلف نہیں ہے۔ طلبا نباتات کے امتحان کے دوران دیدہ دلیری سے نقل کرنے میں مصروف رہے ار مراکز میں متعین اساتذہ ان کی مدد کرتے رہے۔ دریں اثناء تعلیمی بورڈ حیدرآبادکے اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ امتحانات کے انعقاد کو شفاف بنانے کے لئے تشکیل دی گئی چھاپہ مار ٹیموں نے 20 مئی کو مختلف امتحانی مراکز میں چھاپے مار کر نقل کرنے کے 16 کیس اور جعلی امیدواروں کی جانب سے امتحان دینے کے دس کیس رپورٹ کئے ہیں۔

شکریہ ایکسپریس

Comments

Post new comment

Image CAPTCHA
Enter the characters shown in the image.